ماہرین فلکیات نے زمین جیسے دو سیارے دریافت کرلیے

ماہرین فلکیات نے زمین جیسے دو سیارے دریافت کرلیے

 

ماہرین فلکیات نے کرہ ارض سے 33 نوری سال کے فاصلے پرزمین جیسے دو سیاروں کی نشان دہی کی ہے۔

خلائی تحقیق کے امریکی ادارے ناسا کے ٹرانسٹنگ ایکسوپلانیٹ سروے سیٹلائیٹ نے ان سیاروں کو متعدد سیارچوں کے نظام کے قریب شناخت کیا ہے ۔

یہ حیرت انگیزدریافت ماہرین فلکیات نے ہماری کہکشاں کے اندرموجود کثیرسیارچوں کے نظام کے قریب کی ہے۔ یہ سسٹم زمین سے 33 نوری سال کے فاصلے پرموجود ہے۔

اس نظام کو پہلی باراکتوبر2021 میں اس وقت دریافت کیا گیا تھا جب میسا چیوٹیس انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی ( ایم آئی ٹی ) کے کیولی انسٹی ٹیوٹ برائے ایسٹرو فزکس (اجسام فلکی اور ان کی حرکات کا مطالعہ) اوراسپیس ریسرچ سے پوسٹ گریجویشن کرنے والے مچل کیونی موتو’ٹرانسٹنگ ایکسو پلانیٹ سروے سیٹلائیٹ‘ مرکزسے ملنے والے ڈیٹا کا تجزیہ کررہیں تھی۔

ماہرین فلکیات کے لیے توجہ کا محور HD 260655 نامی ستارہ بنا جوکہ اس نظام کے مرکزمیں زمین جیسے دو بڑے سیاروں کی میزبانی کررہا تھا ۔

کیونوموتونے ستارے HD 26065سے آنے والی روشنی کی گہرائی میں ان دو گردشی اجسام کو دیکھا۔ پھرانہوں نے موصول ہونے والے سگنلزکی جانچ کے لیے مشن کے سائنس انسپیکشن پائپ لائن کا استعمال کرتے ہوئے ان اجسام کی بطورٹی ای ایس ایس کے آبجیکٹ آف انٹرسٹ یا ممکنہ سایروں کے طورپردرجہ بندی کردی۔

اس طرح کی زمرہ بندی کا طریقہ کارکئی سالوں پرمحیط ہوتا ہے، لیکن اس معاملے پریہ مدت HD 260655 کے محفوظ شدہ ڈیٹا کی وجہ سے مختصرہوگئی۔

 

اسٹاف رپورٹر

اسٹاف رپورٹر

انڈیپینڈنٹ پریس سروسز (آئی پی ایس) کے اسٹاف رپورٹر

تبصرہ کریں:

متعلقہ خبریں